Bayanat (Lectures) - بیانات

بیانات

حضرت سید شبیر احمد کاکا خیل (دامت برکاتہم)

بیانDownload کرنے کیلئے متعلقہ بیان پہ right clickکریں اورsave link asپہ کلک کرکے locationبتائیں

بیان سننے کیلئے متعلقہ بیان پہ right clickکریں اورopen link in a new tab پر کلک کریں تو بیان اسی بروزر میں چل پڑےگا



درسِ مثنوی شریف 2017-2018

تاریخ درسِ مثنوی حکایتِ مثنوی مقامِ درس ڈاؤنلوڈ
20180106 ابتدا مثنوی دفتر چہارم
اس عاشق کی حکایت کا تتمہ جوکوتوال سے(ڈر کر) باغ میں بھاگ گیا اور (اپنی) معشوقہ کو اس باغ میں پایا اور کوتوال کے حق میں دعائے خیر کرتا تھا خوشی سے (جیسا کہ) ارشاد ہے وَعَسٰۤى اَنۡ تَكۡرَهُوۡا شَيۡـــًٔا وَّهُوَ خَيۡرٌ لَّـکُمۡ‌ . شاید تم کسی چیز کو ناپسند کرو اور وہ تمہارے لئے اچھی ہو
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171230 ابتدا مثنوی دفتر چہارم خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171223 اس عاشق کی کہانی جو لمبے فراق والا اور بہت محنت کشیدہ تھا
عاشق کا معشوق سے آملنا اور اس بات کا بیان کہ تلاش کرنے والا پالیتا ہے کیونکہ حدیث ہے کہ جس نے کچھ طلب کیا اور کوشش کی اس نے پا لیا سچ فرمایا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اور جو شخص ذرہ بھر نیکی کرے وہ اس کو دیکھ لے گا
لاہور ڈاؤنلوڈ
20171216 بیہوش عاشق کا ہوش میں آنا اور مدح و شکر کی طرف متوجہ ہونا خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171209 معشوق کا اپنے بے ہوش عاشق کی دلجوئی کرنا تاکہ ہوش میں آئے خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171202 معشوق کا عاشق کو کشش کرنا اس طرح سے کہ عاشق کو خبر نہیں ہوتی نہ اسے اسکی امید ہوتی ہے اور نہ یہ بات اس کے دل میں گزرتی ہے اور نہ اس کشش سے عاشق میں کوئی نشانی ظاہر ہوتی ہے سوائے خوف کے جو نا امیدی کے ساتھ ملا ہوا ہوتا ہے دوام طلب کے ساتھ
اس بخاری عاشق کا صدر جہاں کی خدمت میں پہنچنا
حضرت سلیمان علیہ السلام کے حضور میں مچھر کا ہوا سے دادخواہی کرنا
ظلم کی فریاد کرنے والے مچھر کو حضرت سلیمان علیہ السلام کا حکم دینا کہ اپنے مدعا علیہ کو ہماری عدالت میں پیش کرے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171125 اس بات کا بیان کہ ظالم عین غلبہ میں (خود) مغلوب ہے خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171118 رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف سے ان قیدیوں کے دل کی بات کا جواب
اس بات کا بیان کہ ظالم عین غلبہ میں (خود) مغلوب ہے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171111 اس بات کا بیان کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے حدیبیہ سے بے مراد واپس آنے کو حق تعالیٰ نے فتح کا لقب بخشا (چنانچہ یہ بشارت) کہ ہم نے تم کو نمایاں فتح دی بظاہر بندش تھی اور درحقیقت کشائش۔ چنانچہ نافہ کا توڑنا درحقیقت اس کی درستی ہے
اس حدیث کی تفسیر کہ لَا تُفَضِّلُوْنِیْ عَلیٰ یُونُسَ بْنِ مَتّٰی اِلیٰ اخرہ (مجھ کو حضرت یونس بن متی پر فضیلت نہ دو الخ)
پیغمبر صلی اللہ علیہ وسلم کا طعنہ زنوں کے طعن اور ان کی بدگوئی پر آگاہ ہونا
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171104 ارادوں کو فسخ کرنا اور قصدوں کو توڑنا آدمی کو اس بات سے آگاہ کرنے کے لئے ہے کہ مالک اور زبردست وہی تعالیٰ ہے ار کبھی کبھی اس کے ارادہ کو فسخ نہ کرنا اور اس کو پورا کر دینا اس لئے ہے کہ اس کو ارادہ کرنے پر قائم رکھے حتیٰ کہ وہ پھر اس کے ارادہ کو توڑ دیتا ہے تاکہ تنبیہ پر تنبیہ ہو جائے
حضرت پیغمبر صلی اللہ علیہ وسلم کا قیدیوں کی طرف نظر کرنا اور تبسم فرما کر یہ حدیث ارشاد کرنا کہ مجھے ان لوگوں پر تعجب آتا ہے جو بیڑیوں کے ساتھ جنت کی طرف کھینچے جاتے ہیں
اس آیت کی تفسیر اِنْ تَسْتَفْتِحُوْا فَقَدْ جَآءَکُمُ الْفَتْحُ (اگر تم فتح طلب کرتے ہو تو تم کو فتح مل گئی) طعنہ زن کہتے تھے کہ ہم سے اور محمد صلی اللہ علیہ وسلم سے جو فریق حق پر ہے اس کو فتح و نصرت دے اور یہ اس لئے کہتےتھے کہ ان کو گمان تھا کہ ہم خود حق پر ہیں اور طالب حق بے غرض اب محمد صلی اللہ علیہ وسلم فتحیاب ہوگئے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171028 ہر عنصر کا اپنی جنس کو کشش کرنا جو آدمی کی (جسمانی) ترکیب میں داخل ہے خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171021 تفسیر آیہ وَاَجْلِبْ عَلَيْهِمْ بِخَيْلِكَ وَرَجِلِكَ
آدھی رات کے وقت طلسم کی آواز کا مسجد کے مہمان کو پہنچنا
عاشق کی ملاقات صدرِ جہاں کے ساتھ
ملتان ڈاؤنلوڈ
20171014 مہمان کو مار ڈالنے والی مسجد کے مہمان کا باقی ماندہ قصہ
تفسیر آیہ وَاَجْلِبْ عَلَيْهِمْ بِخَيْلِكَ وَرَجِلِكَ
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20171007 ایک بچھڑے کے پانی پینے سے گریز کرنے کی تمثیل خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170930 ایک بچھڑے کے پانی پینے سے گریز کرنے کی تمثیل خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170923 حق تعالیٰ کے اس قول کی تفسیر یا جِبالُ أَوِّبِی مَعَهُ وَ الطَّیْرَ(اے پہاڑو تسبیح و تلاوت میں داؤد کے ساتھ انکے جوابی بنو ایسا ہی حکم پرندوں کو بھی دیا)
ایک بچھڑے کے پانی پینے سے گریز کرنے کی تمثیل
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170916 اس بات کا بیان کہ انبیاء اور اولیا علیہم السلام کا پہاڑوں اور غاروں میں جا رہنا اپنے آپ کو چپا کی غرض سے نہیں اور نہ مخلوق کے دق کرنے کے خوف سے ہے بلکہ اس سے لوگوں کو ترکِ دنیا کی ہدایت کرنا مقصود ہے
اولیاء اور اولیاء کے کلام کی تشبیہ حضرت موسیٰ علیہ السلام کے عصا اور حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے افسون سے
حق تعالیٰ کے اس قول کی تفسیر یا جِبالُ أَوِّبِی مَعَهُ وَ الطَّیْرَ(اے پہاڑو تسبیح و تلاوت میں داؤد کے ساتھ انکے جوابی بنو ایسا ہی حکم پرندوں کو بھی دیا)
مکہ مکرمہ ڈاؤنلوڈ
20170909 عذر کرنا بی بی کا چنے سے اور اس کے جوشانے کی حکمت
مسجد کے مہمان کا باقی قصہ اور اس کے ارادہ کی پختگی اور سچائی
کم فہم اور طعنہ باز لوگوں کی بداندیشی کا ذکر
مکہ مکرمہ ڈاؤنلوڈ
20170902 مومن کے بلا میں بے صبری کرنے اور بھاگنے کی تمثیل چنے کی باہر نکلنے کے لئے جوش کے ساتھ اضطراب و بیقراری کرنے اور گھر کی بی بی کے اس کو روکنے کے ساتھ
عذر کرنا بی بی کا چنے سے اور اس کے جوشانے کی حکمت
مکہ مکرمہ ڈاؤنلوڈ
20170826 مہمان کا ان لوگوں کو جواب دینا اور مثال بیان کرنا اس واقعہ کے ساتھ کہ ایک کھیتی کا رکھوالا ڈفلی کی آواز سے اس اونٹ کو کھیتی سے بھگانا چاہتا تھا جس کی پیٹھ پر سلطان محمود کا نقارا بجایا جاتا تھا
مومن کے بلا میں بے صبری کرنے اور بھاگنے کی تمثیل چنے کی باہر نکلنے کے لئے جوش کے ساتھ اضطراب و بیقراری کرنے اور گھر کی بی بی کے اس کو روکنے کے ساتھ
مکہ مکرمہ ڈاؤنلوڈ
20170819 مہمان کا ان لوگوں کو جواب دینا اور مثال بیان کرنا اس واقعہ کے ساتھ کہ ایک کھیتی کا رکھوالا ڈفلی کی آواز سے اس اونٹ کو کھیتی سے بھگانا چاہتا تھا جس کی پیٹھ پر سلطان محمود کا نقارا بجایا جاتا تھا خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170812 مہمان کا ان لوگوں کو جواب دینا اور مثال بیان کرنا اس واقعہ کے ساتھ کہ ایک کھیتی کا رکھوالا ڈفلی کی آواز سے اس اونٹ کو کھیتی سے بھگانا چاہتا تھا جس کی پیٹھ پر سلطان محمود کا نقارا بجایا جاتا تھا خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170805 ملامت کرنے والوں کا دوبارہ مسجد کے مہمان کو سمجھانا
مہمان کا ان لوگوں کو جواب دینا اور مثال بیان کرنا اس واقعہ کے ساتھ کہ ایک کھیتی کا رکھوالا ڈفلی کی آواز سے اس اونٹ کو کھیتی سے بھگانا چاہتا تھا جس کی پیٹھ پر سلطان محمود کا نقارا بجایا جاتا تھا
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170729 شیطان کا قریش کو یہ کہنا کہ تم لوگ حضرت احمد علیہ السلام سے جنگ کرنے آؤ اور میں مدد و اعانت کروں گا اور اپنے قبیلے کو کمک کے لئے بلاؤں گا اور اس کا دونوں فوجوں کے مقابلہ کے وقت بھاگ نکلنا خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170722 مسجد والوں کا مہمان کو ملامت کرنا تاکہ اس مسجد میں نہ سوئے خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170715 حکیم جالینوس اس دنیاوی زندگی کا دلدادہ تھا کیونکہ اس کا ہنر اسی جگہ کارآمد ہے اس نے وہ ہنر اختیار نہ کیا جو اس عالم میں کام آئے اس لئے وہ اپنے آپ کو وہاں عام لوگوں کے ساتھ برابر پاتا ہے اور اس روز حکم اللہ کا ہے اس کی امیری نہ رہے گی خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170708 حکیم جالینوس اس دنیاوی زندگی کا دلدادہ تھا کیونکہ اس کا ہنر اسی جگہ کارآمد ہے اس نے وہ ہنر اختیار نہ کیا جو اس عالم میں کام آئے اس لئے وہ اپنے آپ کو وہاں عام لوگوں کے ساتھ برابر پاتا ہے اور اس روز حکم اللہ کا ہے اس کی امیری نہ رہے گی
مسجد والوں کا مہمان کو ملامت کرنا تاکہ اس مسجد میں نہ سوئے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170701 اس عاشق بے پرواہ کا بخارا میں آنا اور دوستوں کا اس کو ظاہر ہونے سے ڈرانا
عاشق کا ملامت کرنے والوں اور ڈرانے والوں کو جواب دینا
اس عاشق کا معشوق کے پاس پہنچنا جب کہ وہ جان سے ہاتھ دھو چکا تھا
مہمان کو مار ڈالنے والی ایک مسجد اور ایک عاشق کا واقعہ
ایک مسافر کا اس مسافر کو مار ڈالنے والی مسجد میں آنا
مسجد والوں کا مہمان عاشق کو وہاں سونے پر ملامت کرنا
عاشق کا نصیحت کرنے والوں اور ملامت گروں کو جواب دینا
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170624 مردِ عاشق کا ملامت کرنے والوں اور ناصحوں کو جواب دینا
اس عاشق کا بخارا کی طرف روانہ ہونا
مرحبا مسجد ڈاؤنلوڈ
20170617 مردِ عاشق کا ملامت کرنے والوں اور ناصحوں کو جواب دینا مرحبا مسجد ڈاؤنلوڈ
20170610 ایک معشوق کا عاشق سے پوچھنا کہ شہروں میں سے کونسا شہر بہت اچھا ہے
دوستوں کا اس کو بخارا کی طرف واپس جانے سے منع کرنا
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170603 روح القدس (جبرائیل علیہ السلام) کا آدمی کی شکل میں مریم علیہ السلام پر ظاہر ہونا غسل اور برہنگی کے وقت اور ان کا حق تعالیٰ سے پناہ مانگنا
حضرت جبرائیل علیہ السلام کا مریم علیہا السلام کو کہنا کہ میں اللہ تعالیٰ کا فرستادہ ہوں مجھ سے پریشان و مخفی نہ ہو
اس ملازم کا غلبہ عشق میں جان کی پرواہ نہ کرنے والوں کی طرح یہ قصد کرنا کہ بخارا میں جائے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170527 روح القدس (جبرائیل علیہ السلام) کا آدمی کی شکل میں مریم علیہ السلام پر ظاہر ہونا غسل اور برہنگی کے وقت اور ان کا حق تعالیٰ سے پناہ مانگنا خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170520 مردِ عاشق کا ملامت کرنے والوں اور ناصحوں کو جواب دینا خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170513 اس ملازم کا غلبہ عشق میں جان کی پرواہ نہ کرنے والوں کی طرح یہ قصد کرنا کہ بخارا میں جائے
ایک معشوق کا عاشق سے پوچھنا کہ شہروں میں سے کونسا شہر بہت اچھا ہے
دوستوں کا اس کو بخارا کی طرف واپس جانے سے منع کرنا
مری ڈاؤنلوڈ
20170506 روح القدس (جبرائیل علیہ السلام) کا آدمی کی شکل میں مریم علیہ السلام پر ظاہر ہونا غسل اور برہنگی کے وقت اور ان کا حق تعالیٰ سے پناہ مانگنا
حضرت جبرائیل علیہ السلام کا مریم علیہا السلام کو کہنا کہ میں اللہ تعالیٰ کا فرستادہ ہوں مجھ سے پریشان و مخفی نہ ہو
سفرِ کشمیر ڈاؤنلوڈ
20170429 روح القدس (جبرائیل علیہ السلام) کا آدمی کی شکل میں مریم علیہ السلام پر ظاہر ہونا غسل اور برہنگی کے وقت اور ان کا حق تعالیٰ سے پناہ مانگنا خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170415 (بخارا کے بادشاہ) صدرِ جہاں کے ایک ملازم کا قصہ جس پر (کسی جرم کی )تہمت لگ گئی اور وہ جان کے خوف سے بخارا بھاگ گیا
روح القدس (جبرائیل علیہ السلام) کا آدمی کی شکل میں مریم علیہ السلام پر ظاہر ہونا غسل اور برہنگی کے وقت اور ان کا حق تعالیٰ سے پناہ مانگنا
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170408 ایک چیز پر نفی و اثبات کا بلحاظ نسبت جمع ہونا اور بلحاظ اختلاف جہت متفرق ہوجانا
درویش کامل کی فنا و بقا کا مسئلہ
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170401 کسی چیز کی مثال اورتقلید کے ساتھ معلوم کرنے میں اور اسکی ماہیت کو تحقیق کے ساتھ سمجھنے میں فرق خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170325 مولانا رومی ؒ اور تصوف میرپور کشمیر ڈاؤنلوڈ
20170318 ہر جانور کا اپنے دشمن کی بو محسوس کرنا اور اس سے ٹل جانا اور بردباری اور نقصان اس شخص کا جو کسی ایسے شخص کادشمن ہو جس سے بچنا بھاگنا ممکن نہ ہو
کسی چیز کی مثال اورتقلید کے ساتھ معلوم کرنے میں اور اسکی ماہیت کو تحقیق کے ساتھ سمجھنے میں فرق
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170311 جہد کن در بیخودی خود رابیاب کی تشریح قصور ڈاؤنلوڈ
20170225 شیخ کی زبان سے حکمت کی باتیں بیان ہونے کے وقت سامعین اور مریدوں کے آداب خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170218 نص مطلق بے قید کو (اور اس کے) ساتھ قیاس کو تشبیہ دینا(وحی روح اقدس اور عقل کے ساتھ) خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170211 دنیا کی تشبیہ حمام کے ساتھ جو بظاہر فراخ ہے اور فی الحقیقت تنگ ہے۔ اور خواب کی تشبیہ موت کے ساتھ جو اس تنگی سے خلاصی ہے
اس بات کا بیان کہ (آدمی میں) جس قدر غفلت، سستی اور تاریکی ہے سب بدن سے ہے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170204 موت کے سبب سے اس بدن کے فنا ہونے میں حکمت
دنیا کی تشبیہ حمام کے ساتھ جو بظاہر فراخ ہے اور فی الحقیقت تنگ ہے۔ اور خواب کی تشبیہ موت کے ساتھ جو اس تنگی سے خلاصی ہے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170128 خرید و فروخت میں دھوکہ کھانے کے تدارک کا حیلہ
حضرت بلال رضی اللہ عنہ کا خوشی کی حالت میں وفات پانا
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170121 حضرت حمزہ رضی اللہ عنہ کا جواب خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170114 حضرت حمزہ رضی اللہ عنہ کا زرہ (پہنے) بدوں شریک جنگ ہونا
حضرت حمزہ رضی اللہ عنہ کا جواب
خانقاہ ڈاؤنلوڈ
20170107 حضرت موسیٰ علیہ السلام کا اس شخص کی سلامتی ایمان کے لئے دعا کرنا
حق تعالیٰ کا حضرت موسیٰ علیہ السلام کی دعا قبول فرمانا
اس عورت کی کہانی جس کے فرزند زندہ نہیں رہتے تھے اس نے حق تعالیٰ کی درگاہ میں زاری کی تو جواب آیا کہ یہ ریاضت کا بدل ہے اور تیرے لئے یہی جہاد و مجاہدہ کا قائم مقام ہے
خانقاہ ڈاؤنلوڈ


درسِ مثنوی شریف 2010-2016

  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2 - فیصل آباد
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2 صفحہ126سے130 - خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2 صفحہ121سے126 - خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2 صفحہ113سے121 - خانقاہ
  • ددرس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2 صفحہ97سے113 - خانقاہ
  • درس مثنوی ۔ جہد کن در بیخودی - خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2- خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2- خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ82تا87 - خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دتر3حصہ2صفحہ75 تا 82 - خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دتر3حصہ2صفحہ73 تا 75 - خانقاہ
  • ددرس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ71 تا 75 - مکہ مکرمہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ67 تا 70 - مکہ مکرمہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ65 تا 67 - مکہ مکرمہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ60- مکہ مکرمہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ- مکہ مکرمہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ48- خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ40-4- خانقاہ
  • درس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ38-40- خانقاہ
  • تدرس مثنوی جلد10دفتر3حصہ2صفحہ32-38- خانقاہ
  • درس مثنوی شریف- خانقاہ
  • درس مثنوی شریف- خانقاہ
  • درس مثنوی جلد3دفتر3حصہ2صفحہ17-25 - خانقاہ
  • تعلیم مثنوی شریف دفترسوم جلد 10 صفحہ 13تا 16۔مرحبا مسجد
  • تعلیم مثنوی شریف دفترسوم جلد 10 صفحہ 11تا 13۔خانقاہ
  • تعلیم مثنوی شریف دفترسوم جلد 10 صفحہ 10تا 11۔خانقاہ
  • تعلیم مثنوی شریف دفترسوم جلد 10 صفحہ 1 تا 9۔خانقاہ ہ
  • قال را بگزار مرد حال شو ۔ پیش مرد کاملے پامال شو
    کونیہ ترکی سے خصوصی درس مثنوی
  • نفس خود راکش جہانے زندہ کن۔خواجہ را کشتہ ست اورابندہ کن
    جلد دسویں، دفتر سوم، حصہ دوسرا،صفحہ 5
  • بس ہم ایں جا دست و پایت در گزند۔بر ضمیرِتو گواہی مید ہند
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 410
  • باخود آمد گفت را کوتاہ کرد۔لب بہ بست و غرمِ خلوتگاہ کرد
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 404
  • یاد آمد آں حکایت آں فقیر۔ روز و شب میکرد افغان و نفیر
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 389
  • دل نباشد غیر آں دریائے نور۔دل نظر گاہِ خدا، وا نگاہ کُور
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 383
  • ایں خمارِ غم دلیلِ آن شدہ است۔کہ بداں مقصود مستی ات بدہ است
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 382
  • در گوی و در چہی اے قلتسباں۔دست وادارازسبالِ دیگراں
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 378
  • چوں دقوقی آں قیامت را بدید۔رحمِ او جوشیدواشکِ اودوید
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 374
  • پیش در شد آں دقوقی در نماز۔قوم ہمچوں اطلس آمد او طراز
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 365
  • در تحیات و سلام الصالحین۔مدح جملہ انبیاء آمد عجیں
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 362
  • چوں نجس خواند ست کافر را خدا۔آں نجاست نیست در ظاہر ورا
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 358
  • بعد دیرے گشت آنہا ہفت مرد۔جملہ در قعدہ پئے یزدانِ فرد
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 352
  • ایں قرارت خواں بہ تخفیفِ کذب۔ایں بود کہ خویش بیند محتحب
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 349
  • بازمیدیدم کہ میشد ہفت یک۔نور اوبشگافتے جیبِ فلک
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 343
  • از مثال و مثل و فرقِ آں براں۔جانبِ قصہ دقوقی اے جواں
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 334
  • ناطق کامل چو خواں پاشے بود۔بر سرخوانش زہر آشے بود
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 328
  • مردِ مہماں صبر کردو ناگہاں۔کشف گشتش حال مشکل در زماں
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 321
  • شیخ دانا زیں عتابش گرم شد۔درسخن یکبارہ بے آرزم شد
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 316
  • گفت استر باشتر ای خوش رفیق۔در فراز و شیب و در راہِ عمیق
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 305
  • مخلصاں ہستند دائم در خطر۔امتحانہا ہست درراہ ای پسر
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 294
  • بود درویشے بکہسارے مقیم۔خلوت اورابود ہمخواب و ندیم
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 284
  • جملہ استادند بیروں منتظر۔تادراید از درآں یارِ مصر
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 274
  • علم رادوپر گماں رایک پرست۔ناقص آمدظن بہ پرواز، ابتر ست
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 268
  • خشکی لب ہست پیغامے زآب۔کہ بمات آرد یقیں ایں اضطراب
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 256
  • گفت پس من نیستم معشوق تو۔من ببلغارومرادت درقتو
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 251
  • آں یکے مردِ دوموآمد شتاب ۔پیش یک آئینہ دارِمستظاب
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 244
  • پیش ازیں طوفان و بعد از ایں مرا۔ تو مخاطب بودہ درماجرہ
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 237
  • ہمچواں وقتیکہ خواب اندر روی۔ توز پیش خود بہ پیشِ خود روی
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 230
  • ور بگویم در مثالِ صورتے۔برہماںصورت بخسپی اے فتے
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 227
  • بہر تمییز حق از باطل نکوست۔سحر کردن شد حرام اے مرد دوست
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 219
  • ہست عشقش آتشے اشکال سوز۔ہر خیالے رابروبد، نور ِ روز
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 202
  • اندریں ویرانہ کیں معروف نیست۔از برائے حفظ گنجینہ زرے ست
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 202
  • گفت امر آمد برو مہلت تُرا۔من بجائے خود شدم رستی ہلا
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 196
  • مار گیرے اژدھا آوردہ است۔ بو العجب نادر شکارے کردہ است
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 186
  • اژدھاے مردہ دید آنجا عظیم۔کہ دلش از شکل او شد پر زبیم
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 180
  • یک حکایت بشنواز تاریخ گو۔تابری زیں راز سر پوشیدہ بو
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 175
  • فوت شد از ماو حملش شد پدید۔ نطفہ اش جست و رحم اندر خزید
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 168
  • بر فلک پیدا شدایں استارہ اش۔کوری فرعون و مکر و چارہ اش
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 164
  • چشمہا و گو شہارا بستہ اند۔جز نگر آنہا کہ از خود رستہ اند
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 153
  • چوں شکم خود را بحضرت در سپرد۔ گربہ آمدپوست دنبہ را ببرد
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 140
  • راست گر گفتی و کج کم باختی۔یک طبیبے داروِما ساختی
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 136
  • آنچناں مستے مباش اے بیخرد۔کہ بعقل آید پشیمانی خورد
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 132
  • عاشق و معشوق را در رستخیر۔دوبدو بندندو پیش آرند تیز
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 130
  • بعد ماہے چوں رسیدند آنطرف۔بےنواایشاںستوراں بے علف
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 115
  • آں شعاعے بود بر دیوارِ شاں۔جانب خورشید وارفت آں نشاں
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 108
  • قصہ اصحاب ضرواں خواندہ۔ پس چرادر حیلہ جوئی ماندہ
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 95
  • قصہ اصحاب ضرواں و حیلہ کردن ایشاں تابے زحمت فقیراں باغہاراقطاف کنند
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 94
  • زیں نمط او صد بہانہ باز گفت۔حیلہا باحکم حق نفتاد جفت
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 90
  • ماند پیغمبر بخلوت در نماز۔با دوسہ درویش ثابت بر نیاز
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 87
  • جبرئیلے رابراستوں بستۂ ۔ پرو بالش را بصد جا خستۂ
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 82
  • آب آتش خو زمیں بگرفتہ بود ۔ موج او مراوج کہ رامے ربود
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 72
  • گفت حق آنرا کہ ایں گر گش بخورد ۔ دید گردگرگ چوں زاری نکرد
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 80
  • بیوفائی چُوں سگاں را عار بود ۔ بیوفائی چوں رواداری نمود
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 70
  • تو نخواندی قصۂِ اہلِ سبا ۔ یا بخواندی و ندیدی جُز صدا
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 63
  • حزم آں باشد کہ چوں دعوت کنند ۔ تونگوئی مست و خواہانِ منند
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 55
  • جان جاہل زیں دعا جز دور نیست ۔ زانکہ یا رب گفتنش دستور نیست
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 50
  • آں بلالِ صدق در بانگِ نماز ۔ حیّ را ھی خوانداز رُوے نیاز
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 45
  • عمر تو مانند ہمیانِ زر است ۔ روز و شب مانندِ دینار اشمر است
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 38
  • ہر دہاں راپیل بوے میکند ۔ گرد معدہ بر بشر برمے تند
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 34
  • آں شنیدی تو کہ در ہندوستاں ۔ دیدِ دانائے گروہِ دوستاں
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 28
  • چوں جنیں بُد آدمی خونخوار بود ۔ بُوداورابودازخوں تار و پُود
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 24
  • واندراو افزوں نشد آں جملہ اکل ۔ زانکہ حیوانی نبودش اکل و شکل
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 21
  • پیش از عثمان یکے نساخ بود ۔ کو بہ نسخ وحی جَدے مینمود
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 103
  • قوت از قوتِ حق مے زہد ۔ نزعروقے کز حرارت میجہد
    جلد 9، دفتر سوم، حصہ پہلا،صفحہ 14
  • زاہدے بُد درمیاں بادیہ ۔ در عبادت غرق چُوں عبادیہ
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 265
  • توبتن حیواں بجانی از ملک ۔ تاروی ہم بر زمیں ہم بر فلک
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 261
  • تخم بطی گرچہ مرغِ خانہ ات ۔ کرد زیر پر چودا یہ تربیت
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 258
  • زاغِ ایشاں گر بصورت زاغ بود ۔ باز ہمت آمد و ما زاغ بود
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 254
  • او بود محروم از صحرا اومرج ۔ عمر او اندر گرہ کاری ست خرج
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 248
  • نے اخی نے نفس واحد باشداد ۔ در شقاوت نحس و ملحد با شداد
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 240
  • دو قبیلے کاوس خزرج نام داشت ۔ یک ز دیگر جانِ خوں آشام داشت
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 237
  • اے برادر قصہ چوں پیمانہ ایست ۔ معنی سندر وے بسانِ دانہ ایست
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 213
  • گر تو ہستی آشنائے جانِ من ۔ نیست دعوی گفت معنی لانِ من
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 202
  • گفت پیغمبر کہ خسپد چشم من ۔ لیک گے خسپددلم اندر وسن
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 196
  • صوفیاں بر صوفیے شنعت زدند ۔ پیش شیخِ خانقاہے آمدند
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 186
  • ور بگوئی مشکل استفسار گو ۔ با شہنشاہاں تو مسکیں وارگو
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 174
  • بر شتر زد پر تو اندیشہ اش ۔ گفت بنمایم ترا تو باش خوش
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 170
  • آں خبیث از شیخ مے لائید ژاژ ۔ کژ نگر باشد ہمیشہ چشم ِ کاژ
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 159
  • آں یکے میگفت در عہد شعیب ۔ کہ خدا از من بسے دید ست عیب
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 152
  • چوں یکے حس دردروں بکشاد بند ۔ ما بقیٰ حسہا ہمہ مبدل شوند
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 117
  • یک عرابی بار کردہ اشترے ۔ یک جوالے زفت از دانہ پرے
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 98
  • درسِ مثنوی مکہ مکرمہ
  • کنگ زفتے کود کے را یافت فرد ۔ زرد شد کو دک زبیم قصد مرد
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 93
  • کو دکے در پیش تابوت پدر ۔ زار مے نالید و بر میکوفت سر
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 83
  • گفت پیرے مر طبیبے را کہ من ۔ درحیرم از دماغِ خویشتن
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 75
  • ہر کہ زیشاں گفت از عیب و گناہ ۔ وزدِلِ چوں سنگ و از جانِ سیاہ
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 67
  • آں غزانِ ترک خونریز آمدند ۔ بہر یغما در یکے دہ در شدند
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 65
  • چُوں پدید آمد کہ آں مسجد نبود ۔ خانۂ حیلت بدو دام جُہود
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 55
  • اُشترے گم کردہ ٔ اے معتمد ۔ ہر کسے زا شتر نشانے مید ہد
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 46
  • اندریں گردُوں مکرر کن نظر ۔ زانکہ حق فرمود ثُمَؔ ارجع بَصَر
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 40
  • ہر کرا جامہ ز عشقتے چاک شد ۔ او ز ِحرص و عیب کلی پاک شد
    جلد 1، دفتر اول، حصہ اول،صفحہ 39
  • اشترے گم کردی و جستیش چست ۔ چوں بیابی چوں ندانی کانِ تست
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 30
  • راستاں را حاجتِ سو گند نیست ۔ زانکہ ایشا نرا دو چشم روشنے ست
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 18
  • اینچنیں کژ بازیے در جفت و طاق ۔ با نبی مے باختند اہلِ نفاق
    جلد 8، دفتر دوم، حصہ چوتھا،صفحہ 4
  • دید موسیٰ یک شبانے را براہ ۔ کو ہمے گفت ایخدا و اے اِلٰہ
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 4
  • گفت اکنوں راست گفتی صادقی ۔ از تو ایں آید، تو ایں را لائقی
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 280
  • گفت پیغمبر نشانے دادہ است ۔ قلب نیکورامحک بنہادہ است
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 270
  • گفت امیر اورا کہ اینہا راست ست ۔ لیک بخش تو از نیہا کاست ست
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 249
  • در خبر آمد کہ آں معاویہ ۔ خفتہ بُد در قصر در یک زاویہ
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 236
  • گفت ابلیس کشا ایں عقدہ را ۔ من محکم قلب را و نقد را
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 254
  • آتش حرص از شما ایثار شد ۔ واں حسد چوں خار بد گلزار شد
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 224
  • کرد نقاشے دو گونہ نقشہا ۔ نقشہائے صاف و نقش بے صفا
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 216
  • کرد نقاشے دو گونہ نقشہا ۔ نقشہائے صاف و نقش بے صفا
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 216
  • ایں امانت درد دل، و جاں حاملہ ست ۔ ایں نصیحتہا مثالِ قابلہ ست
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 212
  • چوں نمودی قدرتت بنمائے رحم ۔ اے نہادہ رحمہا در شہم و لحم
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 208
  • از خطر ہاروت و ماروت آشکار ۔ چاہِ بابل را نمودند اختیار
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 200
  • گفت پیغمبر مر آں بیمار را ۔ چوں عیادت کر دیارِ زار را
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 198
  • گِل مخر گِل را مخور گِل رامجو ۔ زانکہ گِل خوارست دائم زرد رُو
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 193
  • اوست دیوانہ کہ دیوانہ نشد ۔ ایں عسس رادید و در خانہ نشد
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 188
  • محتسب در نیم شب جائے رسید ۔ در بُنِ دیوار مردے خفتہ دید
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 178
  • آب و خاک و باد و نارِ با شرر ۔ بے خبر با ماوباحق با خبر
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 174
  • آں یکے میگفت خواہم عاقلے ۔ مشورت آرم بدو در مشکلے
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 167
  • شکر دا نستیم آغاز تُرا ۔ انبیا گفتند آں راز تُرا
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 162
  • اے ضیاءالحق حسام الدین بیا ۔ کہ نروید بے تو از شورہ گیا
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 152
  • خانۂ نو ساخت روزے نو مرید ۔ پیر آمد خانۂ اورابدید
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 138
  • از صحابہ خواجۂ بیمار شد ۔ وانداراں بیماری او چوں تار شد
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 116
  • گفت جالینوس با اصحابِ خود ۔ مرمراتاآں فلاں دارُودہُد
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 104
  • آں مسلماں ترکِ آں آبلہ گرفت ۔ زیرِ لب لاحول کویاں رہ گرفت
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 90
  • گفت موسیٰ با یکے اہلِ خیال ۔ کابدے اندیش از شقاوت در ضلال
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 89
  • ورنخواہی خدمت اہلِ صفا ۔ ہمچو خرسی درد ہانِ اژدھا
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 76
  • ہاے و ہوے باد و شِیر افشانِ ابر ۔ در غمِ مایند یک ساعت تو صبر
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 66
  • مصطفےٰ گوید اگر گویم براست ۔ شرحِ آں دشمن کہ در جانِ شماست
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 56
  • اے مسیحِ خوش نفس چونی زر رنج ۔ کہ نبود اندر جہاں بے رنج گنج
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 46
  • بے سبب بیند چو دیدہ شد گذار ۔ تو کہ در حسی سبب را گو شداد
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 41
  • ایں زمیں از حلم حق دارد اثر ۔ تا نجاست بُرد و گلہا داد بر
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 30
  • بعد ازاں در سرِ موسیٰ حق نہفت ۔ راز ہائے کاں نمے آید بگفت
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 20
  • دید موسیٰ یک شبانے را براہ ۔ کو ہمے گفت ایخدا و اے اِلٰہ
    جلد7، دفتر دوم، حصہ تیسرا،صفحہ 4
  • بِنگری در رُوے ہر مردے سوار ۔ گویدت مِنگر مرا دیوانہ وار
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 309
  • تاسہ شب خامُش کُن اِیں نیک و بدت ۔ اِیں بشاں باشد کہ یحیٰ آیدت
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 306
  • گر ہوا و نار را سِفلی کند ۔ تیرگی و دُردی و ثفلی کند
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 290
  • رحمتِ صد تَوبراں بلقیس باد ۔ کہ خدایش عقلِ صد مرداں بداد
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 283
  • قصۂ شاہ و امیران و حسد ۔ بر غلامِ خاصِ سلطانِ ابد
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 272
  • برق را خود یَخطَفُ الاَبصَار داں ۔ بورِ باقی را ہمہ ابصار داں
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 264
  • دانشِ ناقص کجا ایں عشق زاد ۔ عشق زاید ناقص اما بر جماد
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 260
  • پس ازاں عالَم بدیں عالَم چناں ۔ تعبتیہا ہست بر عکس ایں بداں
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 248
  • یک گرہ را خود معرف جامہ است ۔ در قبا گویند کو از عامہ است
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 242
  • نے کہ لقماں را کہ بندہ پاک بُود ۔ روز و شب در بندگی چالاک بُود
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 238
  • چونکہ ذوالنون سُوے زنداں رفت شاد ۔ بند بر پا دست بر سر ز افتقاد
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 229
  • اینچنیں ذوالنون مصری را فتاد ۔ کاندر و شور و جنونِ نو بزار
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 213
  • آب گفت آلودہ را در من شتاب ۔ گفت آلودہ کہ دارم شرم زاب
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 206
  • شد زر رنگ و طبع آتش محتشم ۔ گویدا و من آتشم من آتشم
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 200
  • جہد کن در بیخودی خو را بیاب ۔ ختم شد واللہ اعلم بالصواب
    خصوصی بیان مرحبا مسجد
  • ایں قیامت زاں قیامت کے کم ست ۔ آں قیامت زخم و ایں چوں مرہم ست
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 195
  • زانکہ مخلص در خطر باشد مدام ۔ تاز خود خالص نگرد داو تمام
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 188
  • نورِ حق بر نورِ حِس راکِب شود ۔ وانگہے جاں سُوے حق راغب شود
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 182
  • پندِ من بشنوکہ تن بندِ قوی ست ۔ کہنہ بیروں کُن گرت میلِ نوی ست
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 175
  • ہمچوآں شخصِ درشتِ خوش سخن ۔ درمیانِ رہ نشاند او خار بُن
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 157
  • بر لب جو بُود دیوارے بلند ۔ بر سرِ دیوار تشنہ دردمند
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 145
  • باز در ویرانہ بر چغداں رتاد ۔ راہ گم کرو در وِیراں فتاد
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 125
  • قوتِ اصلی بشر نورِ خدا ست ۔ قوتِ حیوانی مراورا نا سزا ست
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 106
  • ورنداری باورامن رو ببیں ۔ در نُبے واللہُ خَیرُالمَاکِرِین
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 99
  • چوں زگر ما بہ برامد آں غلام ۔ سُوئے خویشش خواند آں شاہِ ہمام
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 79
  • در لحد کِیں چشم را خاک آگنَد ۔ ہست آنچہ گور را روشن کند؟
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 62
  • چونکہ ذوالنون از غمش دیوانہ شُد ۔ مصر جاں راسمچو شکر خانہ شد
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 56
  • گفت نے وَاللہ بِاللہِ العَظِیم ۔ مالِکِ للمُلکِ رحمٰن رحیم
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 28
  • آں غلامک را چو دید اہل ذکا ۔ آں دگر را کرد اشارت کہ بیا
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 14
  • بادشاہے دو غلام ارزاں خرید ۔ بایکے زاں دو سخن گفت و شنید
    جلد6 ، دفتر دوم، حصہ دوسرا،صفحہ 4
  • در گزر از فضل در چستی و فن ۔ اکار خدمت دارد و خُلقِ حَسَن
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 290
  • آں یکے از خشم مادر را بکُشت ۔ ہم بزخمِ خنجرو ہم زخمِ مُشت
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 280
  • یک غریبے خانہ میجُست از شتاب ۔ دو ستے بُردش سُوے خانہ خراب
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 268
  • گاں جمالِ دِل جمالِ باقی ست ۔ دو لجش از آبِ حیواں ساقی ست
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 258
  • پر توِ عقل ست آں بر حسِ تو ۔ عاریت داں آں ذہب برمِس تو
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 255
  • آنچہ معشوق ست صورت نیست آں ۔ خواہ عشقِ اینجہاں خواہ آں جہاں
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 252
  • گرچہ ہستی تو کنواں غافل ازاں ۔ وقت حاجت حق کند اورا عیاں
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 242
  • چرخ اِفلاسم شنید اَے پُر طمع ۔ تو نہ بشنیدی بگوشِ بے لمع
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 240
  • با وکیل قاضِیٔ اِدراک مند ۔ اہلِ زنداں در شکایت آمدند
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 224
  • گفت گیرم کز طمع قاروں شوی ۔ آخرالامر اندراں ہامُوں شوی
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 210
  • گفت گیرم کز طمع قاروں شوی ۔ آخرالامر اندراں ہامُوں شوی
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 210
  • اللہ اللہ میزنی از بہرِ ناں ۔ بے طمع پیش آو اللہ رابخواں
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 190
  • گر مرا روزی بُدے اندر جہاں ۔ خود چِکارستے مرا با مردگاں
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 178
  • زاہدے را گفت یا رے در عمل ۔ کم گری تا چشم را نا ید خلل
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 168
  • بود شیخے دائما او دام دار ۔ از جوانمردی کہ بود او نامدار
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 153
  • احمدﷺ خود کیست اسپاہِ زمیں ۔ ماہِ بیں بر چرخ و بِشگافش جبیں
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 146
  • عِلم آں باز ست کو از شہ گریخت ۔ سُوئے آں کمپیر کو مے آردبیخت
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 135
  • گر یکے گوئی تو در میدانِ اُو ۔ گرد بر میگرد داز چوگان اُو
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 132
  • زاں سبب فرمود یزداں وَالضحٰے ۔ وَالضحٰے نورِ ضمیرِ مصطفٰے ﷺ
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 126
  • بشنوا کنواں صورت افسانہ را ۔ لیک ہین از کہ جدا کن دانہ را
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 103
  • چوں ازیشاں مجتمع بینی دو یار ۔ ہپ یکے باشند وہم سی صد ہزار
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 95
  • گشت با عیسیٰ یکے ابلہ رفیق ۔ استخوا نہا دید در گُوے عمیق
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 80
  • ماہِ روزہ گشت در عہد عمر ۔ بر سرِ کو ہے دویدند آں نَفَر
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 70
  • آئینہ کلی ترا دیدم ابد ۔ دیدم اندر چشمِ تو من نقش خود
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 67
  • در آں چیزے کہ تو ناظِر شوی ۔ میکند با جنس سیر اے معنوی
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 60
  • نا مصور یا یا مصور گفتنت ۔ باطل آمد بے ز صورت رفتنت
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 54
  • راہِ حِس راہِ خَرَان ست اے سوار ۔ اَے خراں را تو مزاحم شرم دار
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 43
  • چونکہ زاغاں خیمہ بر گلشن زدند ۔ بُلنبُلاںِ پنہاں شدند و تن زدند
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 39
  • چونکہ مومِن آینہ مومن بود ۔ روئے اوز آلودگی ایمن بود
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 33
  • خلوت از اغیار باید نے زیار ۔ پوستیں بہرِوے آمد نے بہار
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 29
  • بود آدم دیدۂ نورِ قدیم ۔ موے در دیدہ بود کوہِ عظیم
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 24
  • ایں دہاں بر بند تا بینی عیاں ۔ چشم بندِ آنجہاں حلق و دہاں
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 16
  • اگر جملہ حکمت الٰہی بندہ را معلوم شود ۔ در فوائد آں کار بندہ ازاں کار فرو ماند
    جلد5 ، دفتر دوم، حصہ اول،صفحہ 5
  • گفت امیرالمومنین با آں جواں ۔ کہ بہنگامِ نبرد اے پہلواں
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 312
  • روزے آدم بر بلیسے کو سقی ست ۔ از حقارت وززیافت بنگریست
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 280
  • میکند دنداںِ بدراآں طبیب ۔ تار ہد از درد و بیماری حبیب
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 272
  • چوں درآمد علتے اندر غَزا ۔ تیغ را دیدم نہاں کردن سَزا
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 254
  • از علی آموز اخلاص عمل ۔ شیر حق راداں منزہ از دغل
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 236
  • گفت من تیغ از پئے حق میزنم ۔ بندۂ حقم نہ مامورِ تنم
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 250
  • از علی آموز اخلاص عمل ۔ شیر حق راداں منزہ از دغل
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 236
  • آتشے افتاد در عہدِ عمر ۔ ہمچو چوبِ خشک میخورداو حجر
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 233
  • نار شہوت مے نیا رامد بآب ۔ زانکہ دارر و ِ طبع دوزخ در عذاب
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 229
  • زید را اکنوں نیابی کو گریخت ۔ جست از صفِ نعال و لعل ریخت
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 222
  • گفت پیغمبر کہ اَصحَابِی نُجُوم ۔ رہروانرا شمع و شیطان را رجوم
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 218
  • ناطقہ چوں فاضح آمد عیب را ۔ مید را ند پردہ ہائے غیب را
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 204
  • چونکہ لقماں را درآمد قے زناف ۔ مے برآمد از درونش آبِ صاف
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 201
  • دل چہ میگوید بدیشاں اے عجب ۔ طرفہ وصلت طرفہ پنہانی سبب
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 196
  • جملہ را چوں روزِ رُستا خیز من ۔ فاش مے بینم عیاں از مرد و زن
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 185
  • گفت پیغمبر صَبَاحے زید را ۔ کَیفَ اَصبَحتَ اے رفیقِ با صفا
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 177
  • چینیاں گفتند ما نقاش تر ۔ رومیاں گفتند مارا کروفر
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 169
  • چینیاں چوں از عمل فارغ شدند ۔ از پئے شادی دہلہاپے زدند
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 170
  • بینی اندر دل علومِ انبیا ۔ بے کتاب و بے معید و اوستا
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 165
  • ہمچو طفلاں جملہ تاں دامن سوار ۔ گوشۂ دامن گرفتہ اسپ وار
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 160
  • ہیں بظنے یا بعکسے ہم شما ۔ در میفتید از مقاماتِ سما
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 150
  • چوں گناہ و فسق خلقاں در جہاں ۔ میشدے روشن بایشاں آنزماں
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 134
  • پیش معنی چیست صورت بس زبوں ۔ چرخ را معنیش میدار دنگوں
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 131
  • بلعم باعور را خلق جہاں ۔ سغبہ شد مانندِ عیسٰےِ زماں
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 122
  • پیش از عثمان یکے نساخ بود ۔ کو بہ نسخ وحی جَدے مینمود
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 103
  • گفت یوسف ہیں بیاور ارمغاں ۔ اُوز شرمِ ایں تقاضا در فغاں
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 92
  • پادشاہاں را چنیں عادت بود ۔ ایں شنیدہ باشی اریادت بود
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 75
  • گرگ رابر کند سر آں سرفراز ۔ تانماند دوسری و امتیاز
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 59
  • اَمرِشَاوِرھُم پیغمبر را رسید ۔ گر چہ راے نیست رایش را مزید
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 34
  • ایں حکایت بشنواز صاحب بیاں ۔ در طریق و عادتِ قزدینیاں
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 25
  • پیر رابگزیں کہ بے پیر ایں سفر ۔ ہست بس پُر آفت و خوف و خطر
    جلد 4، دفتر اول، حصہ چوتھا،صفحہ 8
  • اولا بشنو کہ خلقِ مختلف ۔ مختلف جانند از یا تا الف
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 315
  • گر بُتِ زریں بیا بد مومنے ۔ کے ہلداوراپے سجدہ کنے
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 306
  • در حکایت گفتہ ایم احسانِ شاہ ۔ در حقِ آں بے نواے بے پناہ
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 304
  • ناں گِل است و گوشت کمتر خورازیں ۔ تانمانی ہمچو گِل اندر زمیں
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 302
  • زانکہ پیوست ست ہر لولہ بحوض ۔ خوض کُن در معنیِٔ ایں حرف خوض
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 290
  • نیست حاکم تاکند تیمارِ اُو ۔ کارِ خواجہ خود کند یا کارِ اُو
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 284
  • شرح مے خواہد بیانِ ایں سخن ۔ لیک مے ترسم زا فہامِ کہن
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 271
  • دید قومے در نظر آراستہ ۔ قومِ دیگر منتظر برخاستہ
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 259
  • گفت زن صدق آں بود کز بود خویش ۔ پاک برخیزی تواز مجہودِ خویش
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 249
  • گفت زن نِک آفتابے تافت ست ۔ عالمے زور و شنائی یافت ست
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 242
  • یاد دادش لوحِ محفوظِ وجود ۔ تا بدانست آنچہ در الواح بود
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 233
  • دوغ خوردہ مستیے پیدا کند ۔ ہاے و ہُوئے و سر گر اینہا کند
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 225
  • ماجراے مرد و زن را مخلصے ۔ باز مے جویدروانِ مخلصے
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 222
  • قطرہ مے بارید و حیراں گشتہ بود ۔ قطرۂ بے علت از دریائے جُود
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 205
  • کزمخواں اے راست خوانندہ مبیں ۔ کَیفَ اٰسٰی خَلفَ قَوم کَافِرِین
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 204
  • اینت خورشیدے نہاں در ذرۂ ۔ شیرِ نر در پوستینِ برۂ
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 188
  • آں حکیمک اعتقادے کردہ است ۔ کا سماں بیضہ زمیں چوں زردہ است
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 181
  • روز موسٰے پیشِ حق نالاں بدہ ۔ نیم شب فرعون ہم گریاں شدہ
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 172
  • موسٰی و فرعون معنے را رہی ۔ ظاہر آں رہ دار دو ایں بے رہی
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 171
  • نبزد عقل ہر دانندۂ ہست ۔ کہ با گر دندہ گردانندۂ ہست
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 169
  • دید احمد را ابوجہل و بگفت ۔ زشت نقشی کز بنی ہاشم شگفت
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 148
  • لیک نادر طالب آید کز فروغ ۔ در حقِ او نافع آید آں دروغ
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 128
  • سرورانِ مکہ در حربِ رسول ۔ بودشاں قرباں بامیدِ قبول
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 112
  • گفت پیغمبر کہ دائم بہر پند ۔ دو فرشتہ خوش منادی مے کنند
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 108
  • سنگہا اندر کفِ بُو جہل بود ۔ گفت اے احمد بگو ایں چیست زود
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 90
  • اُستُنِ حنانہ در ہجرِ رسول ۔ نالہ میزد ہمچوں اربابِ عقول
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 78
  • مطربے کزوے جہاں شد پُر طرب ۔ رُستہ زآوازش خیالاتِ عجب
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 66
  • پس سوالش کرد صِدیقہ ز صِدق ۔ با خشوع و با ادب از جوشِ عشق
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 61
  • آسمانہاست در ولایت جاں ۔ کار فرماے آسمانِ جہاں
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 53
  • مصطفٰے روزے بگورستاں برفت ۔ با جنازہ یارے از یاراں برفت
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 43
  • غیرت حق بود و باحق چارہ نیست ۔ کو دلے کز حکمِ حق صد پارہ نیست
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 281
  • سوختہ چون قابل آتش بود ۔ سوختہ بستان کہ آتش کِش بُود
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 284
  • آن دمے کزوے مسیحا دم نزد ۔ حق زغیرت نیز بے ما ہم نزد
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 287
  • آن دمے کز آدمش کردم نہاں ۔ با تو گویم اے تو اسرار جہاں
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 287
  • ہر کہ عاشق دیدیش معشوق داں ۔ کو بہ نسبت ہست ہم ایں وہم آں
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 290
  • بہرچہ ازراہ و امانی چہ کفرآں حرف و چہ ایماں ۔ بہرچہ از دوست دُور افتی چہ زشت آں نقش وچہ زیبا
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 296
  • اشک کان از بہرِ اُو بارند خلق ۔ گوہر ست و اشک مندارند خلق
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 302
  • ما چہ باشد در لغت اِثبات و نفی ۔ من نہ اِثباتم منم بے ذات و نفی
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 288
  • خواجہ اندر آتش و درد حنین ۔ صد پراگندہ ہمیگفت اینچنیں
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 315
  • تن قفس شکل ست و زاں شد خارجاں ۔ از فریب داخلان و خارجان
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 324
  • اینہمہ گفتیم لیک اندر بسیچ ۔ بے عنایاتِ خدا ہیچیم ہیچ
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 332
  • قطرۂ عِلم ست اندر جانِ من ۔ وار ہانش از ہواوز خاک تن
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 335
  • ناز را رُوئے بباید ہمچو ورد ۔ چوں نداری گرد بد خوائی مگرد
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 340
  • ناز را رُوئے بباید ہمچو ورد ۔ چوں نداری گرد بد خوائی مگرد
    جلد2، دفتر اول، حصہ دوسرا،صفحہ 340
  • خواہ از آدم گیر نورش خواہ ازو ۔ خواہ ازخم گیر مے خواہ از کدو
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 17
  • چوں شدی مَن کَانَ للہِ ازوَلَہ ۔ مَن ترا باشم کہ کَانَ اللہُ لَہ
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 14
  • جان آتش یافت زاں آتش کشے ۔ جان مردہ یافت از وے جنبشے
    جلد3، دفتر اول، حصہ تیسرا،صفحہ 21